یہ فیشل آپ عید میں ایک ہی دفعہ کرلیں تو کافی ہے

یہ فیشل آپ عید میں ایک ہی دفعہ کرلیں تو کافی ہے

اکثر خواتین اور مرد اپنے سانولے رنگ سے بہت تنگ اور بہت پریشان ہوتے ہیں کیونکہ کسی بھی شادی بیاہ یا عید وغیرہ پر تیار ہونا اور پھر خوبصورت لگنا نا مممکن بن جات اہے کیونکہ سانولہ رنگ ہو تو کوئی بھی چیز خوبصورت نہیں لگتی ۔ اور اور اس سے بہت شرمندگی کا باعث بنتا ہے اور نہ ہی یہ رنگ کسی کریم سے صاف ہوتا ہے کیونکہ یہ کچھ ٹائم کے لیے تو آپ کی رنگت کوصاف کرتا ہے۔ پر آپ کی جلد پر وہ نکھار نہیں لا سکتا جو اپ چاہتے ہیں۔ اس طرح آپ کی سانولی رنگت کے لیے ہم آپ کو بیوٹی ٹپس ایسی بتائے گے جس سے آپ کی جلد سے یہ سانولا پن ختم ہو جائے۔ اور آپ کی رنگت بھی صاف ہو جائے اور رنگ بھی گورا ہو جائے ۔عید پر خواتین بہت سنگھار کرتی ہیں ۔اور ہر خواتین دوسری سے زیادہ خوبصورت لگنا چاہتی ہے۔

اور خواتین اس کے لیے پارلر جاتی ہیں ۔اور کئ طرح کی کریمیں وغیرہ گھر میں لا کر استعمال کرتی ہیں۔ اور اس سے ان کو معمولی تو فرق نظر آتا ہے۔لیکن اس سے آپ کی جلد بہت خراب ہو جاتی ہے۔ وقت کے ساتھ ساتھ اور ایسے میں جلد بھی خراب ہو جاتی ۔اور آپ کا جو بچا کچا رنگ ہوتا ہے وہ بھی جل جاتا ہے۔ اور اس سے آپ اپنی صرف جلد کو خراب ہی کر سکتے ہیں ۔اس لیے بازار کی عام کریموں کا استعمال نہ کریں ۔رنگ گورا کرنے کے لیے آپ کو گھر سے ہی دو سے تین چیزیں لینی پڑے گی۔ اور اسے پھر اپلائے کرنا پڑے گا۔ اور اس کے لیے آپ لیموں زیتون اور اولیو آئل کا استعمال کر سکتے ہیں ۔ ان تینوں چیزوں سے اپ مکسچر بنا کر چہرے پر اسے آپ روئی کی مدد سے اپلائے کر سکتے ہیں۔ایک چمچ لیموں کا تیل لیں اور ایک چمچ زیتون کا آئل یا اولیو آئل لیں۔

اور ان دونوں کو مکس کر لیں پھر اس کے بعد پہلے آپ اپنے چہرے کو اچھے سے دھو کرصاف کر لیں ۔اور اس کے بعد آپ ایک کاٹن کی مدد سے اس کو لگائیں۔ اور 15 منٹ تک لگا کر اس کے بعد چہرے کی بھاپ لیں۔ اور اس کے بعد آپ اس چہرے کو کسی کپڑےکی مدد سے صاف کر لیں ۔اور اس سے آپ کے چہرے کی رنگت بھی بلکل صاف شفاف ہوجائے گی۔ اور آپ کا رنگ بھی گورا ہو جائے گا۔ اور اس کا استعمال خواتین اور مرد دونوں کر سکتے ہیں اور عید سے پہلے اس کا استعمال اپ کم از کم ایک ہفتہ پہلے کریں۔ اور روزانہ اس کا استعمال چہرے پر کریں۔ اور اس سے آپ کی جلد کو فائدہ ہے۔ اور نقصان کوئی نہیں ہو سکتا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *